How can I get my stories into Arabic, Urdu and other languages for my fans?

I am becoming increasingly frustrated by the lack of translation services on the internet and the quality of those that do exist. For some time I have been gaining a disproportionately large number of fans in Egypt and India. I don’t know why this is, but that’s hardly the point. If these people are interested in me, then I want to publish something that is easy for them to read. In other words I want to publish in their languages: Urdu and Arabic.

You are probably thinking; what’s the point? If they understand English then they can read it and if not, why bother? Well, I just feel that they deserve it!

Until now I have used Google Translate – http://translate.google.com for twitter and Facebook posts. It’s okay for short posts but as everyone probably knows by now, it’s not great. If you have ever received spam from a fake Russian girl looking for a boyfriend you will know what I mean. The result is a sort of gobble-de-gook; a soup of phrases that overlap each other and mean little. I recently tried to translate a tweet into Chinese and then translate it back to see how good/bad it was. I had to make several attempts before I could get anything that retained even the basic meaning of what I was saying!

The problem is exacerbated by the fact that Arabic, for instance, comes in many flavours and the Arabic that Google Translate uses is closer to the Koranic Arabic than any modern dialect. That is what my Arabic-speaking friends tell me. It is probably the same for Urdu.

Anyway, in an experimental effort to get things moving I am going to post this blog in Arabic and Urdu and then my short story Inchoate in both languages using Google Translate. I know the result will be terrible but perhaps the result will guilt somebody out there into helping me. I can’t afford professional translators so I would like anybody to correct just one sentence. If you can do this I would be very grateful and I will give you a free copy of Vampire Beneficence – a collection of short stories and three first chapters of my best-selling books. So come on, get cracking! Just comment below with the original sentence and the translation.

Blog in Arabic
أنا أصبحت على نحو متزايد بالاحباط بسبب عدم وجود خدمات الترجمة على الإنترنت ونوعية تلك التي لا وجود لها. لبعض الوقت ولقد تم الحصول على عدد كبير جدا من المشجعين في مصر والهند. أنا لا أعرف لماذا هذا هو ، ولكن هذا لا يكاد نقطة . إذا كان هؤلاء الناس مهتمون بي، ثم أريد أن ينشر شيئا من السهل بالنسبة لهم للقراءة. وبعبارة أخرى أريد أن نشر في لغاتهم : الأردية والعربية.

ربما كنت تفكر ، ما هي الفائدة ؟ إذا كانوا يفهمون اللغة الإنجليزية ثم يمكنهم قراءتها ، وإذا لم يكن كذلك، لماذا تهتم ؟ حسنا، أنا فقط يشعرون أنهم يستحقون ذلك !

حتى الآن لقد استخدمت الترجمة من Google : http://translate.google.com في تويتر و الفيسبوك المشاركات . انه بخير للوظائف قصيرة ولكن ما دام الجميع ربما يعرف حتى الآن ، انها ليست كبيرة. إذا كنت قد تلقيت أي وقت مضى البريد المزعج من فتاة روسية وهمية تبحث عن صديقها وسوف تعرف ما أعنيه. والنتيجة هي نوع من تلتهم دو جوك ؛ حساء من العبارات التي تتداخل مع بعضها البعض و تعني الشيء الكثير . حاولت مؤخرا لترجمة تويتر إلى اللغة الصينية ومن ثم ترجمتها إلى الوراء لنرى كيف جيدة / سيئة كان عليه. كان لي لجعل عدة محاولات قبل أن أتمكن من الحصول على أي شيء حتى الاحتفاظ المعنى الأساسي لما كنت أقوله !

وتتفاقم المشكلة من حقيقة أن اللغة العربية ، على سبيل المثال ، ويأتي في كثير من النكهات و العربية أن الترجمة من Google الاستخدامات هو أقرب إلى العربية القرآنية من أي لهجة الحديث. هذا هو ما أصدقائي الناطقة بالعربية تقول لي . وربما هو نفسه بالنسبة الأوردو.

على أي حال، في محاولة تجريبية ل تحريك الأمور وانا ذاهب لنشر هذا بلوق باللغتين العربية و الأردية ثم ضعي القصة القصيرة غير المكتملة في كل من اللغات باستخدام ترجمة غوغل . وأنا أعلم فإن النتيجة ستكون رهيبة ولكن ربما كان نتيجة إرادة الذنب شخص هناك في مساعدتي . لا أستطيع تحمل المترجمين المحترفين لذلك أود أي شخص لتصحيح جملة واحدة فقط . إذا كنت تستطيع أن تفعل ذلك وسأكون ممتنا للغاية وأنا سوف أعطيك نسخة مجانية من مصاص الإحسان – مجموعة من القصص القصيرة و ثلاثة فصول الأول من كتبي الأكثر مبيعا . حتى يأتي يوم ، والحصول على تكسير ! مجرد التعليق أدناه مع الحكم الأصلي و الترجمة.

Blog in Urdu
میں نے انٹرنیٹ پر ترجمے کی خدمات کی کمی اور موجود ہیں کہ ان کے معیار کی طرف تیزی سے مایوس ہوتا جا رہا ہوں . کچھ وقت کے لئے میں نے مصر اور بھارت میں شائقین کی ایک غیر متناسب طور پر بڑی تعداد میں حاصل کر رہے ہیں . یہ ہے کیوں مجھے نہیں معلوم ، لیکن اس مشکل بات ہے . ان لوگوں نے مجھ میں دلچسپی رکھتے ہیں ، تو میں ان پڑھ کرنے کے لئے آسان ہے کہ کچھ میں شائع کرنا چاہتے . اردو اور عربی : دوسرے الفاظ میں میں نے ان زبانوں میں شائع کرنا چاہتے ہیں .

آپ شاید سوچ رہے ہیں، کیا بات ہے؟ وہ انگریزی سمجھ تو وہ اسے پڑھ کر سکتے ہیں اور اگر نہیں تو ، کیوں پریشان ؟ ٹھیک ہے ، میں نے صرف وہ اس کے مستحق لگتا ہے کہ !

http://translate.google.com ٹویٹر اور فیس بک خطوط کے لئے : اب تک میں گوگل کے ترجمہ کا استعمال کیا ہے . یہ مختصر خطوط کے لئے ٹھیک ہے لیکن ہر کسی کو شاید اب تک جانتا ہے کے طور پر ، یہ بہت اچھا نہیں ہے . کیا تم نے کبھی ایک پریمی کے لئے تلاش ایک جعلی روسی لڑکی سے سپیم موصول ہوئی ہے تو آپ میرا کیا مطلب پتہ چل جائے گا . نتیجہ ہیں gobble -DE- gook کی ایک طرح سے ہے، ایک دوسرے سے متجاوز اور تھوڑا سا مطلب ہے کہ جملے کی ایک سوپ . میں نے حال ہی میں چینی میں ایک ٹویٹ میں ترجمہ اور پھر یہ تھا کہ کس طرح اچھا / برا دیکھنے کے لئے اسے واپس کا ترجمہ کرنے کی کوشش کی . مجھے کہہ رہا تھا کی بھی بنیادی معنی کو برقرار رکھا ہے کہ کچھ حاصل کر سکتے ہیں سے پہلے کئی کوششوں کو بنانے کے لئے تھا!

مسئلہ عربی ، مثال کے طور پر ، گوگل استعمال کرتا ہے کسی بھی جدید بولی سے قرآنی عربی کے قریب ہے ترجمہ ہے کہ بہت سے ذائقوں اور عربی میں آتا ہے اس حقیقت کی طرف جارہی ہے . یہ میرا عربی بولنے والے دوست مجھے بتاو کیا ہے . یہ اردو کے لئے شاید ایک ہی ہے .

ویسے بھی ، چیزوں کو منتقل کرنے کے لئے ایک تجرباتی کوشش میں میں گوگل کے ترجمہ کا استعمال کرتے ہوئے دونوں زبانوں میں اپنے مختصر کہانی شروع کرنا تو عربی اور اردو میں اس بلاگ پوسٹ کرنے کے لئے جا رہا ہوں . میں نتیجہ خوفناک ہو جائے گا معلوم ہے لیکن شاید نتیجے میں جائے گا جرم کسی وہاں میری مدد میں . میں نے کسی کو صرف ایک کی سزا کو درست کرنا چاہتے ہیں تو میں پیشہ ور مترجمین متحمل نہیں ہو سکتا . آپ یہ کر سکتے ہیں تو میں بہت شکر گزار ہو جائے گا اور میں آپ کو ویمپائر فیض کی ایک مفت نقل دے گا – مختصر کہانیاں اور میری بہترین فروخت ہونے والی کتابوں میں سے تین سب سے پہلے ابواب کا ایک مجموعہ . تو ، چلو کریکنگ حاصل ! صرف اصل سزا اور ترجمہ کے ساتھ ذیل تبصرہ .

Inchoate in English

Inchoate

Copyright © 2008 by Lazlo Ferran
All Rights Reserved.

Okay. Fuck it – yes. I was there. I spent enough time in the last few par-weeks denying it and since you have become my confidante, let me admit it now. I was there.
So now the shit had hit the fan and humankind had reached their Check-point Charlie wassisname on their biggest planet – Jupiter I think it’s called – a few million years too early and we hadn’t been ready for them. So somebody has to pay. And it looks like it will be me. Not sure if really I am guilty but there it is. Soon the trial will be over and the whole damned quadrant – if not the Universe – will know and then I will really be fucked.
But anyway when are they going to change the broken light like I asked? This constant flicking on and off every few seconds in a ten-by-eight seribdenum cell gives me nowhere to hide and already claustrophobic, now I am getting a damned headache.
Ha! Ha! It was so funny on the first day of my defence when I came right out and said it. Said it out LOUD. They were expecting lies and I have to admit, I had spent almost all the time since my arrest thinking of plausible alibis but none would give me as good a chance of getting off as admitting the truth – or most of it. The bit I wouldn’t admit was the main reason I did it – that I was bored.

“Mr As-qinov, your company records show that on the day in question, 4 August in the year -2.4BE you were indeed assigned to the sector in Northern Texas – on supposedly strictly observational duties.”
I had just denied I was anywhere near the area – had in fact gone home one day early on leave as I was not feeling well. The Council for the Prosecution paused, took off his VisGogs and glanced down from his dais with disdain at me before staring knowingly at the Jury. That was the point at which I admitted I was there, d’ye know what I mean?
“Yes Okay. Okay. I was there. I remember now. I have been under stress you know and I thought at first the day you mentioned was actually the day after I left. Okay so I think I know how it must have happened but it was really nothing. I never meant any harm and really with the god-damned -sorry, with the boredom I had to endure, I just made a simple mistake!”
I turned to the audience for the full effect. “You see a Mole’s job is to mix in with the natives and observe how far advanced they have become – to fill in the Cryme’s Register accordingly and not to interact with the locals any more than strictly necessary. I had been there weeks. WEEKS! And I was sick. Eating tough rancid bison – or whatever those damned things were called – meat every day – bison stew, barbequed bison and bison à la salt every day was really getting me down. And on TOP of that this hairy old whore called – as near as I can make out, Ung-dwid, was all over me d’ye know what I mean? All over me. She stank!
So I was bored and fed up and these hairy dudes were all sitting around late morning after a night’s hunting, partying and fucking, and I could see trouble brewing. I was scared!
Dug – fa-ah – these damned names – don’t they get you? He was the big alpha-male and as dumb as a fish but built like a brick-shit-house. Even I was scared of him and I had a tazer in my hidden pocket. Anyway he was loping around cuffing some of the others – Zuu-gug and the tall one whose name I can’t remember and then he just starting beating Zuu-gug with this damned club. Just kind of recreationally it seemed to me. Then his dark beady eyes set on me, and I just had to act. I had holiday coming on full-pay ‘cos i had done a full year without a break, and it’s just not done to cause a fight among the natives, d’ye know what I mean?
So there I am 2.4 Million years before proper civilization on this damned backwater planet, under the searing heat of a pre-historic sun among the conifers, dressed in a stinking, itchy, lice-infested goat-skin and big hairy wig – I haven’t washed for nearly a month and suddenly I had this idea. ‘Get them distracted’ I thought to myself, so I decided to confuse them a little bit.
‘Umm -unan – shey’ I said out loud, sweeping my arms around encompassing all the dudes there – but not the women. That was the phrase that meant, ‘Okay let’s call a board-meeting. Old Dug – he looked at me curious for a moment and then a kind of smile came across his hairy face and he grunted, grabbed a hunk of meat of some other dude and we all went off to the sacred fire to have this pow-wow.
I had this idea I would give them something to really test their brain-power – you know – might contribute to my own personal research documentation, and then I chuckled to myself. They all looked at me and Dug banged his club on the ground. I kind of wished I had my little phrase-pod in my hand then ‘cos some of the phrases I needed were tricky but anyway I started formally as you do.
“We need to discuss something very important,” I said in a loud voice. They were all looking at me now – all thirty-six of the dudes. Some were picking their noses, or ears, or playing with stones but mostly they were listening. Most of them had been confused by my appearance wearing the tribal icons a few weeks before. With these they had to accept me but they still couldn’t figure out where I came from, and it made them extra-interested in anything I said.
“We need to consider a mystery. Something that other tribes have considered but they are not like us. They cannot find the answer because they are too stupid.” I thought this would really get them on side and it seemed to work. I totally had the floor now. They were mine.
I pointed to a stone on the ground.
“See that stone? It is there. I know it is there because I can see it and I can pick it up.”
I demonstrated the veracity of this for the dimmer in the audience by picking it up.
“See the mountain?” I pointed to it. “We know it is there because we can see it and walk to it.”
“But now we have a more difficult question. A bigger mystery!”
I looked at Dug – his mouth hanging open with rapt concentration. He noticed I had seen his childlike curiosity, closed his mouth and bit an extra-large chunk of bison from the haunch.
“And the question is, do we exist?” I swept my hand around taking in all the dudes there, d’ye know what I mean?
I waited for effect. There was stunned, dumb silence. I looked at Dug. Nothing going on behind these eyes. Okay I would need to clarify.
“What I mean is, we can touch each other and talk to each other, but how do we know that our friends are not just dreams? How do we know, no wait – how do I know that I am not a dream?”
Dug looked quite angry at this point and there were stirrings – some of the guys were starting to get restless and one or two looked like they were thinking of leaving. Then suddenly at the back a quiet dude – later I found out his name was Ung-dun-pwi – stuck his hairy finger in the air.
You could have cut the air with a stone knife. Everybody stopped what they were doing and looked at him. Even Dug stopped mid-bite and cast his beady eyes toward Ung.
“Ermm. You mean; am I awake?” he said using the sounds that meant that.
“Urmmm. Not quite but you are close,” I said. I was quite shocked that he was even this close and I was beginning to feel a little queasy. I realized I had unwittingly broken one of the first laws of my profession.
Then a quizzical expression crossed Ung’s upturned face and he said in a loud, proud voice, “Am I sitting here, under the Sun?” he said.
“Yes.” I said. “That is the question.” This confused them slightly because they thought Ung already had the answer, but he looked triumphant. He guffawed to himself, and sat looking at me intently. He was now my star-pupil and I didn’t know whether to laugh or cry for the fun of it.
“So that is the question for you to consider now.” I said. “I don’t think you will find the answer today but over many meetings – many meetings, and maybe the meetings of your sons.”
And with that I quickly left the scene. I didn’t really think much more of it, you see,” I told the audience. “It was just intended to defuse the situation.”
“But it may have been the turning point Mr As-qinov – the point at which Humankind became conscious.”
‘Fuck it,’ I thought and wagged my antenna a little bit to give the impression I was confused. I knew now exactly what I had done and as far as they were concerned, the only thing left to do was sentence me.
So now it is night, and here I sit talking to you. And soon they will start to ask a bigger question. If As-qinov went back in time to the earliest civilisation and changed when the dudes will reach the Check-point Charlie thingumyjig – which was built by nobody-knows-who, then who created the consciousness that eventually led to Mr As-qinov? And that’s why when they check my cell again in the morning they will find me gone.

* * *

Inchoate in Arabic

غير مكتمل

حقوق التأليف والنشر © 2008 من قبل لازلو فيران
جميع الحقوق محفوظة .

بخير. يمارس الجنس مع ذلك – نعم. كنت هناك . قضيت وقتا كافيا في القليلة الماضية قدم المساواة أسبوع ينكر ذلك ، ومنذ كنت قد أصبحت بلدي المقربات ، اسمحوا لي أن أعترف عليه الآن . كنت هناك .
وحتى الآن كان القرف ضربت المروحة و كان الجنس البشري وصلت بهم التحقق من نقطة تشارلي wassisname على أكبر كوكبهم – كوكب المشتري اعتقد انه دعا – بضعة ملايين من السنين في وقت مبكر جدا ، ونحن لم تكن مستعدة لاستقبالهم . حتى شخص ما لديه لدفع . و يبدو أنه سوف يكون لي. ليس متأكدا مما اذا حقا أنا مذنب ولكن هناك هو عليه. قريبا المحاكمة سوف تكون أكثر و رباعي اللعينة كلها – إن لم يكن الكون – سوف نعرف ومن ثم سوف يكون مارس الجنس أنا حقا .
ولكن على أي حال عندما هم ذاهبون لتغيير ضوء مكسورة مثل سألت ؟ هذا عبها المستمر وإيقاف كل بضع ثوان في خلية seribdenum عشرة قبل ثمانية و يعطيني مكان للاختباء و خانق بالفعل ، والآن أنا على الحصول على الصداع اللعينة .
ها! ها! كان ذلك مضحكا في اليوم الأول من الدفاع عن بلدي عندما جئت الحق في الخروج ، وقال ذلك. قال ذلك بصوت عال . كانوا يتوقعون الأكاذيب وأنا يجب أن أعترف ، كنت قد قضيت طوال الوقت تقريبا منذ تفكيري اعتقال الاعذار معقولة ولكن لا شيء من شأنه أن تعطيني جيدة باعتبارها فرصة للحصول على قبالة كما اعترف الحقيقة – أو أكثر من ذلك . كان قليلا وأنا لن أعترف السبب الرئيسي أنا فعلت هذا – ان كنت بالملل .

“السيد و – qinov ، وتظهر سجلات الشركة أنه في اليوم المذكور، 4 أغسطس في العام – 2.4BE تم تعيينك بالفعل للقطاع في شمال تكساس – على واجبات يفترض الرصد بدقة . ”
كنت قد نفى تماما وكنت في أي مكان بالقرب من منطقة – قد عادوا إلى ديارهم في الواقع يوم واحد في وقت مبكر يوم إجازة وأنا لم يكن على ما يرام . مجلس لمحاكمة توقف ، أقلعت VisGogs له و يحملق أسفل المنصة من له بازدراء في وجهي قبل أن يحدق علم في لجنة التحكيم . هو أن النقطة التي أنا اعترف أنني كنت هناك، كوت تعلمون ما أعنيه ؟
” نعم حسنا حسنا . كنت هناك . أتذكر الآن . لقد كنت تحت ضغط تعرفه و اعتقدت في البداية كان اليوم الذي ذكرت فعلا في اليوم التالي غادرت. حسنا لذلك أعتقد أنني أعرف كيف يجب أن يحدث ولكن كان حقا شيئا ، وأنا لم يكن يعني أبدا أي ضرر و حقا مع الله اللعينة – آسف، مع الملل واضطررت الى تحمل ، أنا فقط ارتكب خطأ بسيط ! ”
والتفت للجمهور للتأثير الكامل . “ترى العمل و الخلد هو خلط في مع المواطنين و مراقبة مدى تقدم حتى أنها أصبحت – لملء في سجل Cryme وفقا لذلك وليس للتفاعل مع السكان المحليين أي أكثر من الضرورة القصوى لقد كنت هناك أسابيع أسابيع . ! و كنت مريضة الأكل البيسون زنخ صعبة – أو أيا كان تلك الأشياء اللعينة كانت تسمى – اللحوم كل يوم – الحساء البيسون ، البيسون البيسون و المعتقل من الشي غرار الملح كل يوم كان الحصول على حقا لي باستمرار وعلى رأسها أن هذا عاهرة قديمة تسمى شعر . – أقرب ما أستطيع أن تجعل من ، اونغ – dwid ، وكان لي في جميع أنحاء كوت تعلمون ما أعنيه جميع أنحاء لي انها ستانك ؟ !
لذلك كنت بالملل و سئمت و هذه الرجال مشعر كانوا يجلسون في جميع أنحاء وقت متأخر من الصباح بعد ليلة من الصيد، و الحفلات و سخيف، وأنا يمكن أن نرى المتاعب تختمر. كنت خائفة !
حفر – كرة القدم آه – هذه الأسماء اللعينة – أنها لا تحصل ؟ وكان كبير ألفا من الذكور و البكم مثل سمكة ولكن بنيت مثل بيت من الطوب القرف . حتى أنني كنت خائفة منه و كان لي تزر في جيبي المخفية. على أي حال كان التخطي حول التكبيل بالأصفاد بعض الآخرين – Zuu جوج وطويل القامة واحد اسمه لا أستطيع أن أتذكر وبعدها بدأت للتو الضرب Zuu جوج مع هذا النادي اللعينة . يبدو مجرد نوع من ترفيهي بالنسبة لي. ثم له مظلمة العينين خرزي تعيين على لي، و أود فقط أن تتصرف . كنت قد عطلة القادمة على كامل الأجر ‘كوس كنت قد فعلت لمدة سنة كاملة دون انقطاع، و مجرد تكن قد فعلت ذلك لسبب معركة بين المواطنين ، كوت تعلمون ما أعنيه ؟
لذلك هناك أنا قبل 2.4 مليون سنة حضارة السليم على هذا الكوكب راكدة اللعينة ، تحت حرارة الشمس الحارقة من ما قبل التاريخ بين الصنوبريات ، مرتديا النتنة ، وحكة ، التي تنتشر فيها القمل الماعز الجلد و شعر مستعار شعر كبيرة – أنا ملاذ ‘ ر غسلها لمدة شهر تقريبا و فجأة خطرت لي هذه الفكرة . ‘ الحصول عليها مشتتا ‘ قلت لنفسي ، لذلك قررت أن نخلط بينها قليلا.
‘ أم unan – shey ‘ قلت بصوت عال، تجتاح ذراعي حول يشمل جميع الرجال هناك – ولكن ليس النساء. هو أن العبارة التي تعني ، ” حسنا دعونا ندعو على بعد اجتماع لمجلس الادارة . حفر القديمة – وقال انه يتطلع في وجهي الغريب ل حظة ثم نوع من الابتسامة جاء عبر وجهه شعر وانه شاخر ، أمسك قطعة كبيرة من اللحم من بعض المتأنق أخرى و ذهبنا جميعا باتجاه آخر إلى النار المقدسة أن يكون هذا نجاح باهر الأسرى .
خطرت لي هذه الفكرة وأود أن نعطيهم شيئا لاختبار حقا بها الدماغ للطاقة – كما تعلمون – قد تسهم في بلدي وثائق البحوث الشخصية ، وبعد ذلك ضاحكا لنفسي . أنهم جميعا يتطلع في وجهي و حفر خبطت ناديه على الأرض . النوع الأول من تمنى كان لي قليلا العبارة جراب في يدي ثم ‘كوس بعض العبارات أنا في حاجة كانت صعبة ولكن على أي حال بدأت رسميا كما تفعل .
وقال “نحن بحاجة لمناقشة أمر هام جدا ” قلت بصوت عال . كانوا جميعا نبحث في وجهي الآن – كل 36 من الرجال . تم التقاط بعض أنوفهم ، أو الأذنين، أو اللعب مع الحجارة ولكن معظمهم كانوا يستمعون . معظمهم قد تم الخلط من جانب ظهوري ارتداء الرموز القبلية قبل بضعة أسابيع. مع هذه كان عليهم أن تقبلني لكنها لا تزال لا يمكن معرفة من أين أتيت ، و جعلهم خارج مهتمة في أي شيء قلته.
” نحن بحاجة للنظر لغزا. شيء أن القبائل الأخرى قد نظرت لكنهم ليسوا مثلنا . انهم لا يستطيعون العثور على إجابة لأنهم أغبياء جدا. ” اعتقدت هذا من شأنه حقا حملهم على الجانب ، ويبدو للعمل . كان لي تماما الكلمة الآن . كانوا الألغام.
وأشرت إلى الحجر على أرض الواقع.
” انظر هذا الحجر ؟ ومن هناك. وأنا أعلم أنه لا يوجد لأنني يمكن أن نرى ذلك ، وأستطيع أن يستلم السلعة “.
أنا أثبت صحة هذا ل باهتة في الجمهور عن طريق التقاط عنه.
” انظر الجبل ؟ ” وأشرت إلى ذلك. ” ونحن نعلم أنه ليس هناك لأننا يمكن أن نرى ذلك والسير على ذلك”.
” ولكن الآن لدينا سؤال أكثر صعوبة. و الغموض أكبر ! ”
نظرت إلى حفر – فمه معلقة مفتوحة مع تركيز سارح الفكر . لاحظ كنت قد رأيت فضوله الطفولي ، أغلقت فمه و بت على قطعة اضافية كبيرة من البيسون من الكفل .
” والسؤال هو ، هل نحن موجودون؟ ” أنا اجتاحت يدي حول أخذ في جميع الرجال هناك، كوت تعلمون ما أعنيه ؟
انتظرت للتأثير. كان هناك الذهول، الصمت البكم. نظرت إلى حفر . لا شيء يجري وراء هذه العيون . حسنا أود أن الحاجة إلى توضيح .
” ما أعنيه هو ، يمكننا تلمس بعضها البعض و التحدث مع بعضهم البعض ، ولكن كيف لنا أن نعرف أن أصدقاءنا ليست مجرد أحلام كيف لنا أن نعرف ، لا الانتظار – ؟ كيف لي أن أعرف أنني لست حلما ”
بدا غاضبا جدا المحفورة في هذه المرحلة ، وكانت هناك تحركات – بعض الرجال كانوا بدءا من الحصول على قلق و احد أو اثنين يشبه كانوا يفكرون في مغادرة البلاد. ثم فجأة في الجزء الخلفي المتأنق هادئة – في وقت لاحق اكتشفت كان اسمه اونغ – كميت – PWI – تمسك إصبعه مشعر في الهواء.
كنت قد قطعت الهواء بسكين الحجر . توقف الجميع ما كانوا يفعلون و نظرت إليه . حتى توقفت حفر منتصف دغة ويلقي له خرزي العينين نحو اونغ .
” . Ermm تقصد ؛ أنا مستيقظا ؟ ” وقال انه باستخدام الأصوات التي يقصد ذلك.
” ، Urmmm . ليس تماما ولكن كنت على مقربة ،” قلت. لقد صدمت تماما أنه حتى هذه وثيقة و كنت قد بدأت تشعر بالانزعاج قليلا . أدركت أنني قد كسر عن غير قصد واحدا من القوانين الأولى من مهنتي .
ثم عبرت تعبير داهية الوجه مقلوبة اونغ و قال في بصوت عال و فخور، ” أنا أجلس هنا ، تحت الشمس ؟ ” قال.
” نعم . ” قلت . واضاف “هذا هو السؤال. ” هذا الخلط قليلا منهم لأنهم اعتقدوا زيارتها اونغ بالفعل الجواب، لكنه بدا المظفرة . انه guffawed لنفسه، وجلس يبحث في وجهي باهتمام. كان الآن نجمي والتلميذ ، وأنا لم أعرف هل أضحك أم أبكي ل متعة من ذلك .
“لذلك هذا هو السؤال بالنسبة لك أن تنظر الآن . ” قلت . ” أنا لا أعتقد أنك سوف تجد الجواب اليوم ولكن على مدى العديد من الاجتماعات – اجتماعات كثيرة ، و ربما اجتماعات أبنائكم . ”
ومع أنني سرعان ما غادر المكان . لم أكن أعتقد حقا أكثر من ذلك بكثير من ذلك ، كما ترى، ” قلت لل جمهور . ” وكان المقصود مجرد انها لنزع فتيل الموقف . ”
” ولكن قد يكون نقطة تحول السيد و – qinov – النقطة التي أصبحت البشرية واعية. ”
‘ اللعنة عليه ، ‘ فكرت و مهزوز هوائي بلدي قليلا لإعطاء الانطباع كنت مشوشة . كنت أعرف الآن بالضبط ما كنت قد فعلت و بقدر ما يشعرون بالقلق ، ترك الشيء الوحيد الذي فعله كان الحكم لي.
حتى الآن هو الليل، وأنا هنا أتحدث إليكم الجلوس . و سرعان ما سوف تبدأ في طرح السؤال الأكبر . إذا ذهبت حي qinov في الزمن الى الوراء أقرب الحضارة و تغيرت عند الرجال سوف تصل إلى نقطة الوصول تشارلي thingumyjig – الذي بناه أحد يعرف الذين ، ثم الذي خلق الوعي التي أدت في النهاية إلى السيد و – qinov ؟ وهذا هو السبب عندما تحقق زنزانتي مرة أخرى في الصباح أنها سوف تجد لي ذهب.

***

Inchoate in Urdu

نامکمل

Lazlo Ferran کاپی رائٹ © 2008
جملہ حقوق محفوظ ہیں .

ٹھیک ہے . بھاڑ میں جاؤ – جی ہاں . میں وہاں تھا . میں نے اس سے انکار گزشتہ چند برابر ہفتوں میں کافی وقت گزارا اور آپ کو اپنے ساتھی بن گئے ہیں کے بعد ، اب مجھے یہ تسلیم کرتے ہیں . میں وہاں تھا .
تو اب گندگی پرستار مارا تھا اور بنی نوع انسان کو ان کے سب سے بڑے سیارے پر ان کے چیک پوائنٹ چارلی wassisname تک پہنچ گیا تھا – مشتری میں یہ کہا جاتا رہا ہے – چند ملین سال بہت جلد اور ہم نے ان کے لئے تیار نہیں تھا . تو کسی کو ادا کرنے کے لئے ہے . یہ میرے ہو جائے گا اور ایسا لگ رہا ہے . اگر یقین نہیں واقعی میں مجرم ہوں، لیکن وہاں ہے . جلد ہی مقدمے کی سماعت کے دوران اور پوری لعنتی کواڈرینٹ ہو جائے گا – کائنات اگر نہیں – پتہ چل جائے گا اور اس کے بعد میں واقعی میں گڑبڑ ہو جائے گا .
لیکن ویسے بھی جب میں نے پوچھا طرح ٹوٹا ہوا روشنی کو تبدیل کرنے جا رہے ہیں؟ دس سے آٹھ seribdenum سیل میں ہر چند سیکنڈ پر اور یہ مسلسل flicking کی چھپانے کے لئے کہیں مجھے دیتا ہے اور پہلے سے ہی claustrophobic ، اب میں ایک مجرم قرار دیا سر میں درد ہو رہا ہوں .
ہا ! ہا ! یہ میں نے صحیح باہر آئے اور جب اس نے کہا میرے دفاع کے پہلے دن پر مضحکہ خیز تھا . اسے با آواز بلند کہا . وہ جھوٹ توقع کر رہے تھے اور میں ممکنہ alibis کی میری گرفتاری کی سوچ کے بعد تقریبا تمام وقت خرچ کیا تھا لیکن کسی نے بھی مجھ سے کے طور پر اچھا ایک حقیقت تسلیم کے طور پر حاصل کرنے کا موقع دے گی ، تسلیم کرنے کے لئے ہے – یا اس سے زیادہ سے زیادہ . میں تسلیم نہیں کریں گے تھوڑا سا میں نے یہ کیا بنیادی وجہ تھا – میں ؤب گیا تھا کہ .

“مسٹر کے طور پر qinov ، آپ کی کمپنی کے ریکارڈ کے سوال میں اس دن ، سال 2.4BE میں 4 اگست کو آپ بے شک شمالی ٹیکساس میں شعبے کے لئے مقرر کیا گیا ہے ظاہر – . قیاس سختی سے جائزہ فرائض پر”
میں صرف میں کہیں بھی علاقے کے قریب تھا کی تردید کی تھی – میں نے اچھی طرح نہیں لگ رہا تھا کے طور پر اصل میں ابتدائی چھٹی پر ایک دن گھر چلے گئے تھے . استغاثہ کے لئے کونسل ، روک دیا گیا ان کے VisGogs لیا اور جیوری پر جان بوجھ کر گھور سے پہلے مجھ سے نفرت کے ساتھ اس کے منڈپ سے نظر . اس میں میرا کیا مطلب ہے میں نے D’ تم ، تھا کا اعتراف کیا ہے جس میں نقطہ تھا؟
“ٹھیک ہے . ٹھیک ہے جی ہاں . میں وہاں تھا . میں نے آپ کو معلوم ہے دباؤ کے تحت کیا گیا ہے اور میں تو میں یہ ہوا ہے کس طرح پتہ لگتا ہے کہ ٹھیک ہے . آپ نے ذکر کیا دن اصل میں میں جانے کے بعد دن تھا سب سے پہلے میں نے سوچا تھا لیکن اب یاد یہ واقعی کچھ بھی نہیں تھا . میں برداشت کرنا پڑا بوریت کے ساتھ ، خدا کے لعنتی – معذرت کے ساتھ واقعی کوئی نقصان اور مطلب نہیں، میں صرف ایک سادہ غلطی کی ! ”
میں مکمل اثر کے لئے سامعین کو تبدیل کر دیا . “آپ کو ایک تل کا کام مقامی لوگوں کے ساتھ ملا اور اب تک وہ بن گئے ہیں اعلی درجے کی کس طرح عمل کرنے کے لئے ہے – . سختی ضروری سے زیادہ مقامی لوگوں کے ساتھ بات چیت کرنے کے مطابق اور نہیں Cryme کے رجسٹر میں بھرنے کے لئے میں وہاں ہفتے کیا گیا تھا ہفتے. ! اور میں بیمار تھا سخت باسی بائسن کھانے – . ہر روز واقعی اس ملاقات بالوں والے پرانے کسبی مجھے نیچے ہو رہی ہے اور اس کے اوپر تھا بائسن سٹو ، barbequed بائسن اور لا نمک ایک بائسن – . یا ان لعنتی چیزوں کہا جاتا تھا – جو کچھ بھی گوشت ہر روز – . ؟ کے طور پر قریب میں باہر کر سکتے ہیں کے طور پر ، Ung – dwid ، سب میرے D’ تم وہ stank مجھ پر میرا مطلب ہے کیا پتہ ختم ہو گیا تھا !
تو میں بور اور تنگ آ چکے ہیں اور ان بالوں دوستوں سب ایک رات کی شکار ، جشن منا کرنے کے بعد دیر سے صبح کے ارد گرد بیٹھے اور اتارنا fucking تھے، اور میں مصیبت پک دیکھ سکتا تھا. میں ڈر گیا تھا !
کھودا – فا ھ – ان لعنتی کے نام – وہ آپ کو حاصل نہیں ہے ؟ انہوں نے کہا کہ بڑے الفا مرد اور ایک مچھلی کے طور پر کے طور پر گونگا تھا لیکن ایک ئنٹ گندگی گھر کی طرح بنایا گیا . یہاں تک کہ میں نے اس کے ڈر گئی تھی اور میں نے اپنے چھپے ہوئے جیب میں ایک tazer تھا . ویسے بھی وہ دوسروں سے کچھ cuffing کے ارد گرد loping گیا تھا – Zuu – gug اور جن کے نام مجھے یاد نہیں کر سکتے ہیں اور پھر اس نے صرف اس لعنتی کلب کے ساتھ Zuu – gug دھڑک شروع کرنے کے قد ایک . صرف کی قسم تفریحی یہ میرے لئے لگ رہا تھا . پھر اس سیاہ beady آنکھوں مجھ پر مقرر کیا ، اور میں صرف کام کرنے کے لئے تھا . میں نے ایک وقفے کے بغیر ایک مکمل سال کیا تھا کیونکہ چھٹی مکمل تنخواہ پر آ رہا تھا ، اور یہ صرف مقامی لوگوں کے درمیان ایک جنگ ، D’ تم سمجھے میں نے کیا پیدا کرنے کے لئے نہیں کیا ہے؟
تو وہاں میں ، 2.4 ملین سال اس لعنتی backwater سیارے پر مناسب تہذیب سے پہلے ہوں ایک بدبودار ، کھجلی ، جوؤں سے متاثرہ بکری جلد اور بڑے بال وگ میں ملبوس میں Conifers کے درمیان ایک پری تاریخی سورج ، کے جھلسانا گرمی کے تحت – میں پناہ گاہ ‘T تقریبا ایک ماہ کے لئے دھویا اور اچانک میں نے یہ اندازہ نہیں تھا . ان مشغول ‘ میں نے سوچا ، تو میں نے ان کو تھوڑا سا ملط کرنے کا فیصلہ کیا .
خواتین لیکن نہیں – ‘ ام تکیا – shey ‘ میں وہاں تمام دوستوں کا احاطہ کے ارد گرد میری باہوں صاف ، بلند آواز سے کہا . ٹھیک ہے کہ ایک بورڈ اجلاس کہتے ہیں ‘ ، کا مطلب ہے کہ جملہ تھا . پرانا کھودا ہے – انہوں نے ایک لمحے کے لئے مجھے عجیب لگ رہا تھا اور اس کے بعد کی مسکراہٹ کی ایک قسم اس کے بال چہرے کے اس پار آیا اور اس نے grunted ، کچھ دوسرے دوست کے گوشت کا ایک Hunk میں پکڑا اور ہم یہ سب جنگی قیدی – واہ کرنے کے لئے مقدس آگ سے چلا گیا .
آپ کو معلوم ہے – ہے – میں میں نے ان سے واقعی ان کی دماغ کی طاقت کا امتحان کرنے کے لئے کچھ دے گی یہ اندازہ نہیں تھا میری اپنی ذاتی تحقیق دستاویزات میں شراکت کر سکتے ہیں ، اور پھر میں اپنے آپ سے chuckled . وہ سب کے سب میری طرف دیکھا اور کھودا زمین پر ان کے کلب ٹککر لگی ہے . میں اس قسم کی مشکل تھے میں نے کی ضرورت ہے کے جملے کے کچھ کیونکہ پھر میرے ہاتھ میں میری چھوٹی جملہ پھلی تھا خواہش ہے لیکن تم کرتے ہو کے طور پر ویسے بھی میں باضابطہ طور پر شروع کر دیا .
“ہم نے کچھ بہت ضروری بات چیت کرنے کی ضرورت ہے ، ” میں نے بلند آواز میں کہا . وہ سب اب میری طرف دیکھ رہے تھے – دوستوں کے تمام تیس چھ . کچھ ان کی ناک ، یا کان اٹھا ، یا پتھر کے ساتھ کھیل رہا لیکن زیادہ تر وہ سن رہے تھے کیا گیا تھا . ان میں سے سب سے زیادہ چند ہفتوں سے پہلے قبائلی شبیہیں پہنے میرے ظہور کی طرف سے الجھن میں کیا گیا تھا . ان کے ساتھ وہ مجھے قبول کرنے کے لئے لیکن میں کہاں سے آیا وہ اب بھی سمجھ نہیں سکتا تھا ، اور یہ کہ میں نے کہا کچھ بھی میں ان اضافی دلچسپی بنایا .
“ہم . ایک رہسی پر غور کرنے کے دوسرے قبائل سمجھا جاتا ہے کہ کچھ کی ضرورت ہے لیکن وہ ہمیں پسند نہیں کر رہے ہیں . وہ بھی پاگل ہو کیونکہ وہ جواب تلاش نہیں کر سکتے . ” میں اس واقعی کی طرف انہیں حاصل سوچا اور اس کے کام کرنے کے لئے لگ رہا تھا . میں مکمل طور پر اب منزل تھا . وہ میرے تھے .
میں زمین پر ایک پتھر کی طرف اشارہ کیا .
“اس پتھر کو دیکھو وہ وہاں ہے . میں اسے دیکھ سکتے ہیں اور میں نے اسے منتخب کر سکتے ہیں کیونکہ یہ وہاں ہے . ”
میں نے اسے اٹھا کر حاضرین میں dimmer کے لئے اس کی حقیقت کا مظاہرہ کیا .
“پہاڑ دیکھو ؟” میں نے اس کی طرف اشارہ کیا . “ہم نے اسے دیکھا اور اس پر چل کر سکتے ہیں کیونکہ یہ وہاں ہے . ”
“لیکن اب ہم ایک زیادہ مشکل سوال ہے . ایک بڑا اسرار !”
میں کھودا کی طرف دیکھا – اس کے منہ rapt حراستی کے ساتھ کھولیں پھانسی . انہوں نے کہا کہ ، میں نے ان کے بچوں کا سا تجسس دیکھا تھا دیکھا اس کے منہ بند کر دیا اور haunch سے بائسن کی ایک اضافی بڑا حصہ کاٹا .
“اور سوال کے جواب میں ہم موجود ہیں ، ہے؟” میں D ‘ تم میرا مطلب جانتے ، وہاں تمام دوستوں میں لے کے ارد گرد میرے ہاتھ بھاری کامیابی حاصل کی ؟
میں اثر کے لئے انتظار کر رہے تھے . دنگ رہ ، گونگا خاموشی تھی . میں کھودا میں دیکھا . کچھ بھی نہیں ان کی آنکھوں کے پیچھے چل رہا ہے . ٹھیک ہے میں واضح کرنے کے لئے کی ضرورت ہو گی .
“کیا میرا مطلب ہے ہم ایک دوسرے کو چھو اور ایک دوسرے سے بات ، لیکن کس طرح ہم نے اپنے دوست کس طرح ہم جانتے ہیں خواب نہیں جانتے ہیں کہ کر سکتے ہیں، ہے ، کوئی انتظار – کس طرح میں نے ایک خواب نہیں ہے جانتے ہیں کہ ”
کھودا اس وقت بہت ناراض دیکھا اور لہر تھے – لوگوں میں سے کچھ بے چین حاصل کرنے کے لئے شروع کیا گیا تھا اور وہ چھوڑ کر جانے کی سوچ رہے تھے جیسے ایک یا دو دیکھا . پھر اچانک پشت پر ایک پرسکون دوست – ہوا میں اس کے بال انگلی پھنس گئے – بعد میں اس کا نام Ung – ڈن pwi تھا پتہ چلا .
آپ ایک پتھر دفاتر کے ساتھ ہوا کاٹ کر سکتے ہیں . ہر کوئی وہ کیا کر رہے تھے بند کر دیا اور اس کی طرف دیکھا . یہاں تک کہ کھودا وسط کاٹنے روکا اور Ung کی طرف اس beady آنکھوں ڈالا .
” . Ermm آپ کا مطلب ، میں جاگ رہی ہوں ؟” وہ اس کا مطلب ہے کہ آواز کا استعمال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ .
” Urmmm . کافی نہیں لیکن آپ کے قریب ہیں ، ” میں نے کہا . میں بہت وہ بھی اس کے قریب تھا اور میں نے ایک چھوٹا سا queasy محسوس کرنے کے لئے شروع کیا گیا تھا کہ چونک گیا تھا . میں نے نادانستہ طور پر اپنے پیشے کے پہلے قوانین میں سے ایک توڑا تھا احساس ہوا .
اس کے بعد ایک کہ Quizzical اظہار Ung کی upturned کے چہرے سے تجاوز کر دی اور وہ ایک زور ، فخر آواز میں کہا ، “میں نے سورج کے تحت ، یہاں بیٹھا ہوں ؟” انہوں نے کہا کہ .
“جی ہاں . ” میں نے کہا . “یہ سوال ہے . ” وہ Ung پہلے ہی جواب تھا سوچا ، لیکن وہ فاتح دیکھا اس کی وجہ یہ تھوڑا سا ان کی الجھن . انہوں نے کہا کہ خود guffawed ، اور intently میری طرف دیکھ بیٹھے . انہوں نے کہا کہ اب میری سٹار طالب علم تھا اور میں نے ہنستے یا اس کا مذاق کے لئے رونا چاہے نہیں جانتے تھے .
“تو اس کی اب آپ کے بارے میں غور کرنے کے لئے سوال ہے . ” میں نے کہا . “میں آپ کو بہت سے اجلاسوں پر لیکن آج جواب مل جائے گا نہیں لگتا ہے – بہت سے اجلاسوں میں ، اور شاید اپنے بیٹوں کے اجلاس . ”
اور اس کے ساتھ میں نے جلدی سے منظر چھوڑ دیا . مجھے سچ میں نہیں لگتا تھا اس کا بہت زیادہ ، آپ کو دیکھ کر ، “میں ناظرین کو بتایا . ” یہ صرف کی صورت حال کو کم کرنے کا ارادہ کیا تھا . ”
“لیکن یہ موڑ مسٹر کے طور پر qinov ہو سکتا ہے – . بنی نوع انسان ہوش ہو گیا جس میں نقطہ”
یہ بھاڑ میں جاؤ ، میں نے سوچا اور میں الجھن میں تھا تاثر دینے کے لئے میرے اینٹینا ہے تھوڑا سا wagged . مجھے سزا تھی میں نے کیا تھا بالکل وہی جو اب جانتا تھا اور جہاں تک وہ فکر مند تھے ، صرف کام کرنا چھوڑ دیا .
تو اب یہ رات ہے ، اور یہاں میں نے آپ سے بات کر بیٹھو. اور جلد ہی وہ ایک بڑا سوال پوچھنا شروع کر دیں گے . کے طور پر qinov قدیم ترین تہذیب کے لئے وقت میں واپس چلا گیا اور دوستوں چوکی چارلی thingumyjig تک پہنچ جائے گی جب تبدیل ہے – کی طرف سے بنایا گیا تھا جس میں کوئی جانتا جو ، پھر جو آخر میں مسٹر کے طور پر qinov کی وجہ سے شعور پیدا کیا ہے؟ وہ صبح میں دوبارہ میرے سیل کی جانچ پڑتال جب وہ مجھ سے چلا گیا مل جائے گا اور اس وجہ سے .

***

Advertisements

4 thoughts on “How can I get my stories into Arabic, Urdu and other languages for my fans?

  1. Here you are my advice: you need to do one thing. By the way I’m Egyptian, and I live in Egypt. So, I tell you tray to make something good in English, and when you succeed that be get easy. I red what you have wrote in Arabic. Sorry, but it was very bad. Don’t expect something good from Google.

    Like

  2. Urdu translation is very confusing and boring by google. I wish I had the time to translate it for you. 😦

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s